13 November, 2018


دارالاِفتاء


اگر کوئی شخص قربانی کا جانور لے کر آتا ہے جانور کو گاڑی سے اتارتے وقت زخمی ہوجاتا ہے اگلے دن صبح جانور قربان کرنا ہے زخم ٹانگ پر لگا ہے مگر جانور چل پھر سکتا ہے۔ کیا ایسے جانور کی قربانی ہو جائے گی ؟

فتاویٰ # 179

مفتی صاحب قبلہ السلام علیکم ورحمۃ اللہ و برکاتہ ہماری ایک گائے ہے جس کے دونوں سنگ پیدائشی طور پر جڑ سے ہی اِس طرح لٹکے ہوئے ہیں کہ چلتے وقت ہر دم دونوں لٹکے ہوئے سینگھ ہلتے رہتے ہیں ۔ کیا اس کی قربانی جائز ہے۔

فتاویٰ # 307

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ: کیا فرماتے ہیں علماے دین ومفتیان شرع متین مسئلہ ذیل میں کہ ہمارے یہاں کچھ لوگ قربانی کے دن اپنے کچھ غیر مسلم دوستوں کو بھی قربانی کا گوشت کھلاتے ہیں۔ ان کا یہ عمل شریعت کے روسے کیسا ہے؟ مدلل جواب عنایت فرمائیں ، مہربانی ہوگی۔

فتاویٰ # 314

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ: کیا فرماتے ہیں علماے دین مسئلہ ذیل میں کہ ذبح کرنے والے کو جانور کا سیرا اور کوڑی اس کا حق سمجھ کر دینا کیسا ہے۔ کچھ ذبح کرنے والے تو اس کو اپنا لازمی حق سمجھتے ہیں۔ مراے کرم شریعت مطہرہ کی روشنی میں جواب عنایت فرمائیں۔

فتاویٰ # 315

قابلِ قدر مفتیان کرام صاحبان السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ قربانی کی کھالیں مسجد اور ایسے مدرسہ جس میں طعام و قیام کا انتظام نہیں ہے یعنی مکتب کی تعمیر کیلئے دی جا سکتی ہیں؟ امید ہے... جلد از جلد جواب عنایت فرمائیں گے جزاکم اللہ خیر الجزاء توصیف ایوبی قاسمی

فتاویٰ # 340

HAZRAT AGAR KOI SHAKHASH SARKARI TEACHER HAI OR USE 5 MONTH SE MONTHLY NHI MILA HAI KYA USPER QURBANI WAJIB HOGI??

فتاویٰ # 341

اسلام علیکم و رحمت اللہ وبرکاتہ کیا فرماتے ہیں علمائے کرام اس مسلے کے بارے میں۔ زید جو کے ایک مسلمان ہے وہ آسٹریلیا کے شہر سڈنی میں رہتا ہے۔ اس نے بکر ے اور مینڈھے کے گوشت کا ھول سیل کا کام شروع کیا ہے۔ زید کے بقول جانوروں کے ذبیحے اور گوشت کی سپلائی کا طریقہ کاردرج ذیل ہے۔ 1۔ زید یا زید کاکوئی ملا زم جانوروں کے فارمز سے جانور خریدتا ہے۔ 2۔ اس کے بعد جانوروں کو ایک ذبح خانے میں لے جاتے ہیں ۔ ذبح خانے کا مالک غیر مسلم ہے لیکن جانورں کو ذبح کرنے والے مسلمان ہوتے ہیں۔ 3۔ ذبح خانے میں جو بھی جانور ذبح ھوتا ہے اس کا پہلے یہاں کی گورنمنٹ کے قانون کے مطابق میڈیکل چیکپ ھوتا ہے۔ جو جانور میڈیکلی فٹ نہ ہو اس کو ذبح نہیں کیا جاتا۔ 4 ۔ ہر جانور کو ذبح کرنے سے پہلے اس کے سر پر ایک بجلی کی نوک دار گن سے کرنٹ دیا جاتا ہے۔ اس پروسیس کو سٹننگ کہتے ہیں۔اس سے جانور کچھ وقت کے لئے بیھوش ھو جاتا ھے۔ اسی بیھوشی کی حالت میں ذبح کرنے والا (مسلمان) تکبیر پڑھ کر جانور ذبح کر دیتاہے۔ زید اور دیگر مسلمان جو گوشت کا کام کرتے ہیں کہ بقول ذبح سے پہلے جانور کو کرنٹ دینے سےجانور کبھی نہیں مرتا۔ اور آسڑیلیا میں جانور کو سٹن کیئے بغیر ذبح کرنا غیرقانونی ہے۔ 4۔ جانوروں کو ذبح کرنے کے بعد اس کی مشینوں کے ذریعے اس کی کھال اتاری جاتی ہے اور اس کے پیٹ میں سے صفائی کی جاتی ہے۔ 5۔ کھا ل اتارنے کے بعد سالم جانور کے گوشت پر جس کمپنی کے یہ جانور ہوتے ہیں اس کی مھر لگا دی جاتی ہے۔ زید کے جانوروں کے گوشت پر زید کی کمپنی کی مہر ھو گی۔ 6۔ اس کے بعد پھر گوشت کا ٹیسٹ ھوتا ھے ۔ جس کے گوشت میں کوئی مسلہ ہو اس کمپنی کو آگاہ کر دیا جا تا ہے۔ 7۔ پھر یہ پورے جانوروں کے صفائی شدہ گوشت ( بغیر کٹائی کے اور زید کی کمپنی کی مہر کے ساتھ) کم وبیش 12 گھنٹے ذبح خانے کے برف خانے میں رہتا ھے۔ اس دوران ھر وقت کوئی مسلمان وہاں موجود ھو یہ ضروری نہیں۔ 8۔ پھر گوشت کے مخصوص ٹرک میں ، جس میں دوسرے ھول سیل کمپنیوں کے حلال جانوروں کا گوشت بھی ہوتاہے ، زید کے جانوروں کا گوشت مختلف مسلمانوں کی گوشت کی دکانوں پر سپلائی کیا جاتا ھے۔ اور ان دکانوں سے مسلمان گوشت کٹوا کر خریدتے ہیں۔ 9۔ زید خود بھی آرڈر پر گھروں میں گوشت سپلائی کرتا ہے ۔ 10۔ زید کے بقول ایسا ممکن نہیں ہے کہ اس کے جانوروں کا گوشت دوسری کمپنی کے جانوروں کے ساتھ مکس ہو جائے کیونکہ ہر جانور کے گوشت پر ہر کمپنی کی مہر ھوتی ھے۔ کیا جن مسلمانوں کی دکانوں پر زید گوشت سپلائی کرتا ہے اور زید سے ڈاریکٹ گوشت لینا جائز ہے؟

فتاویٰ # 435

Copyright @ 2017. Al Jamiatul Ashrafia

All rights reserved